Connect with us

انٹرنیشنل

روس جا کر صدر پوتن سے ملاقات کے لئے تیارہوں، فرانسیسی صدر

Published

on

روس جا کر صدر پوتن سے ملاقات کے لئے تیارہوں، فرانسیسی صدر

روس جا کر صدر پوتن سے ملاقات کے لئے تیارہوں، فرانسیسی صدر

پیرس (انٹرنیشنل ڈیسک)
فرانس کے صدر ایمانوئل میکرون نے کہا ہے کہ وہ روس کے سفر اور صدر ولادیمیر پوتن سے ملاقات کو مسترد نہیں کریں گے لیکن صرف اس صورت میں جب کچھ پیشگی شرائط پوری کی جائیں۔ ان کا کہنا تھا کہ پیرس یوکرین کی حمایت کرتا ہے لیکن تنازعہ میں اضافے سے بچنے کے لیے اقدامات کرے گا. میکرون کا خیال ہے کہ روسی صدر کے ساتھ ان کے مسلسل رابطے کا یوکرین کے ساتھ فرانس کے تعلقات پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ خوراک کی حفاظت جیسے انسانی مسائل پر روسی صدر کے ساتھ بات چیت جاری رکھنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ فرانسیسی رہنما نے کہا کہ کچھ لوگ روس کے ساتھ رابطے کو برقرار رکھنے کی ان کی پالیسی کو نہیں سمجھتے، لیکن وہ ایسا کرتے رہنے کو فرانس کا کردار سمجھتے ہیں۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آیا وہ روس کا دورہ کریں گے، میکرون نے کہا کہ اس کے لیے روسی صدر کی جانب سے کچھ پیشگی شرائط اور “اشاروں” کی ضرورت ہوگی۔

انہوں نے یہ واضح نہیں کیا کہ وہ روس سے کیا چاہتے ہیں، لیکن انہوں نے مزید کہا کہ وہ صدر پوتن کے ساتھ “شفاف طریقے سے” اور صرف اس صورت میں بات کریں گے جب یہ “مفید” ہو۔ فرانسیسی صدر نے اپنے پہلے بیان کا بھی دفاع کیا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ “یہ ضروری ہے کہ روس کی یوکرین میں اقدامات کی وجہ سے تذلیل نہ کی جائے”. فرانس نے یہ غلطی WWI کے بعد جرمنی کے ساتھ کی تھی، اور اس کی وجہ سے ایسی صورتحال پیدا ہوئی جس میں WWII کے شروع ہونے پر امن ختم ہو گیا۔

انٹرنیشنل

اسرائیلی فوج کی فائرنگ میں مزید 7 فلطسینی شہید

Published

on

غزہ: (صدائے روس)مغربی کنارے میں اسرائیلی فوج نے ایک علاقے میں چھاپہ کار کارروائی کے دوران فائرنگ کرکے 7 فلسطینی نوجوانوں کو شہید کردیا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق مغربی کنارے کے علاقے جیریکو کے پناہ گزین کیمپ میں اسرائیلی فوج نے علی الصبح چھاپہ مارا اور سرچ آپریشن کے دوران فائرنگ کرکے 7 نوجوانوں کو شہید کردیا۔

اسرائیلی فوج کی اس جارحیت میں 3 فلسطینی نوجوان زخمی بھی ہوئے جن میں سے دو کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔ زخمی انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں زیر علاج ہیں۔
اسرائیلی فوج کے ترجمان کا کہنا ہے کہ اس علاقے میں مسلح نوجوانوں نے 28 جنوری کو چیک پوسٹ پر حملہ کیا تھا جن کی گرفتاری کے لیے آج جانے والی ٹیم پر بھی فائرنگ کی گئی۔

اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا کہ دفاعی فائرنگ میں دو حملہ آوروں سمیت 7 افراد مارے گئے مارے جانے والے نوجوانوں کا تعلق حماس سے تھا اور وہ اس علاقے کے اہم عہدیدار تھے۔

دوسری جانب حماس نے اسرائیل کے اس اقدام کو بزدلانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ فلسطینیوں کی نسل کشی کا بھرپور جواب دیا جائے گا۔

ادھر قابض اسرائیلی فوج نے مغربی کنارے کے ایک اور علاقے میں چھاپہ مار کارروائی کے دوران 48 سالہ خاتون کو حراست میں لیکر نامعلوم مقام پر منتقل کردیا۔

واضح رہے کہ رواں برس کے آغاز سے اب تک اسرائیلی فوج کی جارحیت میں شہید ہونے والے نوجوانوں کی تعداد 43 ہوگئی جن میں 8 بچے شامل ہیں۔

Continue Reading

ٹرینڈنگ