Connect with us

انٹرنیشنل

سری لنکا میں مہنگائی تمام حدود عبور کرگئی ہری مرچ 1700 روپے کلو

Published

on

سری لنکا میں مہنگائی تمام حدود عبور کرگئی ہری مرچ 1700 روپے کلو

کولمبو (انٹرنیشنل ڈیسک)
سری لنکا میں مہنگائی تمام حدود عبور کرگئی ہری مرچ 1700 روپے کلو تک جا پہنچی. غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر کی کمی Sri Lanka Economic Crisis کا سامنا کررہے سری لنکا میں مہنگائی آسمان چھو رہی ہے۔ چینی قرض کے جال میں پھنسے سری لنکا میں اشیائے اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ ہوا ہے۔ ایک ماہ میں مرچ کی قیمت میں 287 فیصد اضافہ درج کیا گیا اور یہ 1700 روپے فی کلو تک فروخت ہورہی ہے۔ درآمدات میں کمی کی وجہ سے دودھ کا پاؤڈر بھی دستیاب نہیں ہے۔

غیر ملکی قرضوں میں ڈوبے سری لنکا Sri Lanka Economic Crisis میں مہنگائی آسمان چھو رہی ہے۔ حالت یہ ہے کہ ڈیزل اور پیٹرول کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے Vegetable and Food Price Hike in Sri Lanka اشیائے خوردونوش کے علاوہ دیگر اشیاء بھی مہنگی ہو گئی ہیں۔سری لنکا کے حزب اختلاف کے رکن پارلیمنٹ اور ماہر اقتصادیات ہرشا دا سلوا کا کہنا ہے کہ اگر مہنگائی میں کمی نہ آئی تو ملک کے زرمبادلہ کے ذخائر خالی ہو جائیں گے اور بڑھتے ہوئے قرض کی وجہ سے سری لنکا مکمل طور پر دیوالیہ ہو جائے گا۔سری لنکا میں روٹی اور دودھ کے لیے لمبی لائنیں لگی ہوئی ہیں۔ کم امپورٹ کی وجہ سے لوگوں کو دودھ کا پاؤڈر بھی نہیں مل پا رہا ہے۔

ایک کلو مرچ کی قیمت 700 روپے تک پہنچ گئی ہے، آلو 200 روپے فی کلو فروخت ہو رہا ہے۔ بینس پھلی 320 روپے، گاجر 200 روپے، کچا کیلا 120 روپے، بھنڈی 200 روپے اور ٹماٹر 200 روپے فی کلو فروخت ہو رہا ہے۔سری لنکا کے صدر گوتابایا راجا پکسے نے گزشتہ برس ستمبر میں اقتصادی ایمرجنسی نافذ کر دی تھی اور فوج کو ذمہ داری سونپی تھی کہ وہ حکومت کی طرف سے مقرر کردہ قیمت پر لوگوں کو اشیا فراہم کرے۔بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق نیشنل بینک آف سری لنکا یعنی ‘سینٹرل بینک آف سری لنکا’ نے جنوری میں ایک سرکاری بیان جاری کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ گزشتہ برس دسمبر سے مہنگائی کی شرح میں 12.1 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ جبکہ نومبر کے مہینے میں یہ شرح 9.5 فیصد تھی۔

سری لنکا میں ایک ماہ کے اندر اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں تقریباً 15 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ گزشتہ برس اکتوبر میں ایل پی جی کی خوردہ قیمتوں میں تقریباً 90 فیصد کا اضافہ ہوا تھا۔ 12.5 کلو کے گھریلو ایل پی جی سلینڈر کی قیمت 1400 روپے سے بڑھا کر 2657 روپے کر دی گئی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق سری لنکا پر تقریباً 7 ٹریلین امریکی ڈالر کا قرضہ ادا کرنا ہے جس میں سے 5 ارب چین کو دینا ہیں۔سری لنکا کے بیرونی قرضوں میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور 2019 میں یہ جی ڈی پی کے 42.6 فیصد کے برابر ہو گیا۔

جبکہ حالت یہ ہے کہ سری لنکا کے زرمبادلہ کے ذخائر 40 برس کی کم ترین سطح پر پہنچ گئے ہے۔سری لنکا کے مرکزی بینک نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ اس وقت ملک میں 1.58 بلین ڈالر کا زرمبادلہ ہے جو کہ سنہ 2019 میں 7.5 بلین ڈالر تھا۔عالمی بینک نے رپورٹ کہا ہے کہ سری لنکا کی معاشی صورتحال وبائی امراض، معاشی سست روی اور سیاحت کے شعبے میں ہونے والے نقصانات کی وجہ سے خراب ہوئی ہے۔ورلڈ بینک کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وبا کے آغاز سے اب تک 5 لاکھ افراد خط افلاس سے نیچے جا چکے ہیں جو کہ غربت کے خلاف جنگ میں ہونے والی پانچ سال کی پیش رفت کے برابر ہے۔اس وقت سری لنکا کی حکومت نے صورتحال سے نمٹنے کے لیے بھارت، چین اور جاپان سے مدد مانگی ہے۔ حکومت ہند نے ‘نیبر ہڈ فرسٹ پالیسی’ کے تحت مدد کرنے کا یقین دلایا ہے۔

انٹرنیشنل

اسرائیلی فوج کی فائرنگ میں مزید 7 فلطسینی شہید

Published

on

غزہ: (صدائے روس)مغربی کنارے میں اسرائیلی فوج نے ایک علاقے میں چھاپہ کار کارروائی کے دوران فائرنگ کرکے 7 فلسطینی نوجوانوں کو شہید کردیا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق مغربی کنارے کے علاقے جیریکو کے پناہ گزین کیمپ میں اسرائیلی فوج نے علی الصبح چھاپہ مارا اور سرچ آپریشن کے دوران فائرنگ کرکے 7 نوجوانوں کو شہید کردیا۔

اسرائیلی فوج کی اس جارحیت میں 3 فلسطینی نوجوان زخمی بھی ہوئے جن میں سے دو کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔ زخمی انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں زیر علاج ہیں۔
اسرائیلی فوج کے ترجمان کا کہنا ہے کہ اس علاقے میں مسلح نوجوانوں نے 28 جنوری کو چیک پوسٹ پر حملہ کیا تھا جن کی گرفتاری کے لیے آج جانے والی ٹیم پر بھی فائرنگ کی گئی۔

اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا کہ دفاعی فائرنگ میں دو حملہ آوروں سمیت 7 افراد مارے گئے مارے جانے والے نوجوانوں کا تعلق حماس سے تھا اور وہ اس علاقے کے اہم عہدیدار تھے۔

دوسری جانب حماس نے اسرائیل کے اس اقدام کو بزدلانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ فلسطینیوں کی نسل کشی کا بھرپور جواب دیا جائے گا۔

ادھر قابض اسرائیلی فوج نے مغربی کنارے کے ایک اور علاقے میں چھاپہ مار کارروائی کے دوران 48 سالہ خاتون کو حراست میں لیکر نامعلوم مقام پر منتقل کردیا۔

واضح رہے کہ رواں برس کے آغاز سے اب تک اسرائیلی فوج کی جارحیت میں شہید ہونے والے نوجوانوں کی تعداد 43 ہوگئی جن میں 8 بچے شامل ہیں۔

Continue Reading

ٹرینڈنگ