ہومتازہ ترینیوکرین کو ایف سولہ طیارے دینے سے ایٹمی جنگ چھڑسکتی ہے، روس

یوکرین کو ایف سولہ طیارے دینے سے ایٹمی جنگ چھڑسکتی ہے، روس

یوکرین کو ایف سولہ طیارے دینے سے ایٹمی جنگ چھڑسکتی ہے، روس

ماسکو (صداۓ روس)
روس کے سابق صدر دیمتری میدویدیف نے خبردار کیا ہے کہ یوکرین کو ایف سولہ لڑاکا طیاروں کی فراہمی سے جوہری تنازعہ شروع ہونے کا خطرہ ہے۔ واضح رہے نیٹو کے رکن ممالک اس وقت یوکرائنی پائلٹوں کو طیارے کی متوقع منتقلی سے قبل ایف سولہ کو چلانے کی تربیت دے رہے ہیں۔ کیف کئی مہینوں سے مغربی لڑاکا طیاروں کا مطالبہ کر رہا ہے، یہ کہتے ہوئے کہ روسی فضائی برتری کا مقابلہ کرنے کے لیے یوکرین کو ان کی ضرورت ہے۔ میدویدیف نے روسی صحافیوں کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا کہ جوہری تنازعہ کا حادثاتی، غیر ارادی طور پر پھوٹ پڑنا نظر انداز کرنے کی چیز نہیں ہے، یہی وجہ ہے کہ یوکرین کے حوالے سے ایسی تمام سازشیں خطرناک ثابت ہوں گی۔

روس کی قومی سلامتی کونسل کے نائب سربراہ نے امریکی ڈیزائن کردہ جیٹ ایف سولہ کو ممکنہ محرک قرار دیتے ہوئے کہا کہ کیف ان کو چلانے کے لیے زمینی ڈھانچہ نہ ہونے کے باوجود بھی ان طیاروں کو حاصل کرنا چاہتا ہے۔
لہذا اگر ان میں سے ایک طیارہ بی نیٹو کے کسی ملک سے یوکرین کے مشن پر ٹیک آف کرتا ہے تو کیا ہوگا؟ روس پر حملہ؟ انہوں نے کہا میں بیان نہیں کروں گا کہ آگے کیا ہوسکتا ہے. دیمتری میدویدیف نے کہا کہ ان طیاروں کی یوکرین فراہمی کو نیٹو کی قیادت اور امریکہ کی طرف سے بھی منظور نہیں کیا جا سکتا۔ روسی حکام نے پہلے خبردار کیا تھا کہ یوکرین کو ایف سولہ طیاروں کی فراہمی انتہائی مشکل صورت حال پیدا کر دے گی، اس بات پر غور کرتے ہوئے کہ جیٹ طیارے جوہری تنازعہ کا سبب بن سکتے ہیں۔

Facebook Comments Box
انٹرنیشنل

2 تبصرے

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں