ہومتازہ ترینآذربائیجان کے ساتھ جنگ کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے، وزیراعظم آرمینیا

آذربائیجان کے ساتھ جنگ کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے، وزیراعظم آرمینیا

آذربائیجان کے ساتھ جنگ کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے، وزیراعظم آرمینیا

ماسکو (انٹرنیشنل ڈیسک)
آرمینیا کے وزیر اعظم نکول پشینیان نے شائع ہونے والی ایک ویڈیو میں کہا کہ آرمینیا کو آذربائیجان کے ساتھ جنگ کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے اگر وہ باکو کے ساتھ سمجھوتہ نہیں کرتا اور ١٩٩٠ کی دہائی کے اوائل سے اپنے زیر قبضہ چار گاؤں آذربائیجان کو واپس نہیں کرتا۔ پشینیان پیر کے روز شمالی آرمینیا کے تاووش علاقے میں سرحدی علاقوں کے رہائشیوں کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران بات کر رہے تھے، جو کہ ویران آذربائیجانی دیہاتوں کے ایک سلسلے کے قریب ہے جسے یریوان نے ١٩٩٠ کی دہائی کے اوائل سے کنٹرول کیا ہے۔

چار گاؤں، جو ٣٠ سال سے زیادہ عرصے سے غیر آباد ہیں، آرمینیا کے لیے اسٹریٹجک اہمیت کے حامل ہیں کیونکہ وہ یریوان اور جارجیا کی سرحد کے درمیان مرکزی سڑک پر ہیں۔ آذربائیجان نے کہا ہے کہ اس کی زمینوں کی واپسی، جس میں مکمل طور پر آرمینیائی سرزمین سے گھرے ہوئے کئی چھوٹے چھوٹے علاقے بھی شامل ہیں، ناگورنو کاراباخ کے علاقے پر تین دہائیوں سے جاری تنازعہ کو ختم کرنے کے لیے امن معاہدے کے لیے ایک ضروری شرط ہے، جسے باکو کی افواج نے گزشتہ ستمبر میں دوبارہ حاصل کیا تھا۔

روس کی سرکاری خبر رساں ایجنسی تاس نے پشینیان کے حوالے سے بتایا کہ ان کی حکومت کی جانب سے جاری کیے گئے ویڈیو کلپ میں رہائشیوں کو بتایا گیا ہے کہ متنازعہ دیہات پر سمجھوتہ کرنے میں ناکامی “ہفتے کے آخر تک” آذربائیجان کے ساتھ جنگ کا باعث بن سکتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ میں جانتا ہوں کہ ایسی جنگ کیسے ختم ہوگی۔

یاد رہے یریوان کو گزشتہ ستمبر میں ایک بڑی شکست کا سامنا کرنا پڑا جب باکو کی افواج نے نگورنو کاراباخ پر دوبارہ قبضہ کرلیا، جس سے اس علاقے کے تقریباً تمام ١٠٠٠٠٠ نسلی آرمینیائی باشندے آرمینیا فرار ہونے پر مجبور ہوئے۔ اگرچہ کاراباخ کو بین الاقوامی سطح پر آذربائیجان کے علاقے کے طور پر تسلیم کیا جاتا ہے، لیکن اس خطے کے نسلی آرمینیائی باشندوں نے ١٩٩٠ کی دہائی کے اوائل کی جنگ کے بعد سے باکو سے حقیقی آزادی حاصل کی تھی۔

Facebook Comments Box
انٹرنیشنل

6 تبصرے

  1. You actually make it seem so easy along with your presentation but I find this topic to be actually something which I feel I would never understand. It seems too complicated and very large for me. I am looking forward to your next publish, I will attempt to get the grasp of it!

  2. The very root of your writing whilst appearing reasonable at first, did not really work properly with me after some time. Someplace throughout the sentences you actually were able to make me a believer unfortunately just for a short while. I however have a problem with your leaps in assumptions and you might do well to help fill in all those breaks. In the event you can accomplish that, I could undoubtedly be fascinated.

  3. Almost all of what you point out is astonishingly legitimate and it makes me wonder why I hadn’t looked at this in this light previously. This particular article really did switch the light on for me personally as far as this topic goes. Nevertheless there is one factor I am not necessarily too cozy with so whilst I attempt to reconcile that with the main theme of the point, allow me observe just what the rest of the visitors have to point out.Very well done.

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں