Connect with us

انٹرنیشنل

ملک میں مہنگائی کا ذمہ دار روس ہے، برطانیہ

Published

on

ملک میں مہنگائی کا ذمہ دار روس ہے، برطانیہ

ملک میں مہنگائی کا ذمہ دار روس ہے، برطانیہ

لندن (انٹرنیشنل ڈیسک)
برطانیہ کے وزیر خزانہ جیریمی ہنٹ نے سنڈے ٹائمز اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے دعویٰ کیا کہ یوکرین میں روس کے اقدامات کی وجہ سے برطانیہ کی معیشت کساد بازاری میں ڈوب رہی ہے۔ جیریمی ہنٹ نے کہا کہ اس وقت برطانیہ کی معیشت کو درپیش مشکلات اور عدم استحکام کی بنیادی وجہ یوکرین میں جاری روس کی فوجی مہم ہے. ان کا کہنا تھا کہ یہ ‘میڈ ان روس’ مہنگائی ہے اور ہمیں بہتری کی طرف پہلے قدم کے طور پر اس مہنگائی سے چھٹکارا حاصل کرنے کی ضرورت ہے۔ برطانوی کابینہ کے وزیر کا خیال ہے کہ تیسری سہ ماہی میں ملکی معیشت 0.2 فیصد سکڑ جانے کے بعد اب کساد بازاری کی طرف گامزن ہے، افراط زر کی وجہ سے اس میں مزید کمی ہونے کی توقع ہے۔ واضح رہے کساد بازاری کو روایتی طور پر جی ڈی پی میں مسلسل دو سہ ماہی کمی کے طور پر بیان کیا جاتا ہے۔ پچھلے ہفتے بینک آف انگلینڈ نے پیش گوئی کی تھی کہ برطانیہ دو سال تک کساد بازاری کے دلدل میں پھنس سکتا ہے۔

یاد رہے عالمی اور مقامی بحرانوں کا ذمہ دار روس کو ٹھہرانے میں وزیر خزانہ جیریمی ہنٹ اکیلے نہیں ہیں۔ بلکہ اس سے قبل بھی روس کے صدر ولادیمیر پوتن نے واشنگٹن کی طرف سے ایسے ہی بیانات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ مغربی ممالک روس یوکرین تنازعہ کو “لائف لائن” کے طور پر استعمال کر رہے ہیں جس کی وجہ سے وہ اس معاملے میں اپنی غلط فہمیوں کا الزام روس پر ڈال سکتے ہیں لیکن ماسکو کا اس سے قطعی طور پر کوئی تعلق نہیں ہے۔

یاد رہے فروری کے آخر میں یوکرین میں فوجی آپریشن کے آغاز کے بعد سے روس پر اقتصادی پابندیاں عائد کی گئی ہیں۔ ماسکو نے ان اقدامات کو مغرب پر بیک فائر قرار دیا ہے، جس سے تیل اور گیس کی پابندیوں کے نتیجے میں توانائی کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے مہنگائی میں اضافہ ہوا ہے۔

انٹرنیشنل

یوکرین کے فوجی وفد کا خفیہ دورہ اسرائیل

Published

on

یوکرین کے فوجی وفد کا خفیہ دورہ اسرائیل

یوکرین کے فوجی وفد کا خفیہ دورہ اسرائیل

کیف (انٹرنیشنل ڈیسک)
رپورٹ کے مطابق اسرائیلی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ پیر کی رات یوکرین کا ایک فوجی وفد خفیہ طور پر اسرائیل پہنچا جہاں اس نے اسرائیل کے اعلی فوجی حکام سے ملاقات کی۔ اسرائیل کے چینل 13 کا کہنا ہے کہ اسرائیلی حکام نے روس کے ساتھ کشیدگی نہ بڑھنے کے پیش نظر یوکرین کے فوجی وفد کے دورے کو خفیہ رکھا ہے۔ یوکرین کے فوجی وفد کے دورے کی مزید تفصیلات سامنے نہیں آئی ہیں۔ ماسکو اور تل ابیب کے تعلقات اسرائیل کی جانب سے جنگ یوکرین میں یورپ کی حمایت کی وجہ سے کشیدہ ہو گئے۔

یوکرائنی حکام کے مبینہ دورہ اسرائیل کا مقصد یوکرین کے میزائل ڈیفنس کو قبل از وقت وارننگ سسٹم فراہم کرنا تھا۔ اس کے علاوہ یوکرین کے وفد نے فوجی امداد کی درخواست کی ہوگی۔ اس دورے کے دوران یوکرینی وفد کی اسرائیلی فوجی اور دفاعی حکام کے ساتھ ملاقاتیں ہوئیں۔ اس سے پہلے 16 اکتوبر 2022 کو اسرائیل کے وزیر برائے تارکین وطن امور نخمان شائی نے اسرائیلی حکومت سے یوکرین کو فوجی امداد فراہم کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ تاہم 19 اکتوبر 2022 کو اسرائیلی وزیر دفاع بینی گانٹز نے دعویٰ کیا کہ اسرائیل یوکرین کو ہتھیار فروخت نہیں کرے گا۔

Continue Reading

ٹرینڈنگ